تشدد سے ہلاک ہونے والے صلاح الدین کے اہلِ خانہ نے پولیس اہلکاروں کو معاف کردیا

0

گوجرانوالہ(اے‌ون‌نیوز)رحیم یار خان پولیس کی حراست میں ہلاک ہونے والے مبینہ اے ٹی ایم چور صلاح الدین ایوبی کے اہلِ خانہ نے مقدمے میں نامزد پولیس اہلکاروں کو معاف کردیا۔ مذکورہ مقدمے میں اسٹیشن ہاؤس آفیسر (ایس ایچ او)، انسپکٹر اور کچھ کانسٹیبلز کو نامزد کیا گیا تھا جنہوں نے عبوری ضمانت حاصل کرلی تھی۔اس معاملے پر ملک بھر سے برہمی کا اظہار کیا گیا تھا جبکہ ذرائع ابلاغ نے بھی اس پر خاص توجہ دی تھی جس کے بعد حکومت رحیم یار خان کے ڈپٹی پولیس افسر (ڈی پی او) اور اس وقت کے قائم مقام ڈی پی او کو بھی عہدے سے ہٹانے پر مجبور ہوگئی تھی۔

ذرائع کا کہنا تھا کہ معافی کے بدلے حکومت سے اپنے گاؤں گورالی میں ایک سڑک، گیس فراہمی کا نیٹ ورک اور اسکول تعمیر کرنے کا مطالبہ کیا تھا۔ایڈیشنل ڈپٹی کمشنر ریونیو ذیشان حنیف کی جانب سے گیس اور سڑک کے منصوبوں پر عملدرآمد کی یقین دہانی کروائی جانے پر صلاح الدین ایوبی کے والد افضال نے گاؤں کی مسجد میں ہونے والی ایک تقریب میں پولیس اہلکاروں کو معاف کردیا۔

ذرائع کا کہنا تھا کہ افضال کو ’اللہ کے نام پر‘ ملزمان کو معاف کرنے پر قائل کرنے کے لیے مقامی سیاستدانوں سے اہم کردار ادا کیا۔اس ضمن میں جب ایڈیشنل آئی جی پنجاب سے پوچھا گیا کہ اس قسم کے گھناؤنے جرائم میں ریاست کے مدعی بننے کے فریق بننے کے بعد کیا ملزمان کو ریلیف مل سکتا ہے تو ان کا کہنا تھا کہ انہیں ایف آئی آر میں ریلیف مل سکتا ہے البتہ ان کی سروس کا فیصلہ آئی جی پنجاب کریں گے۔

LEAVE A REPLY

Please enter your comment!
Please enter your name here