دعا منگی اغواء کیس ،تحقیقات میں نئے انکشافات

0

کراچی(اے ون نیوز)کراچی کے علاقے ڈیفنس سے قانون کی طالبہ دعا منگی کے اغوا کے سلسلے میں پولیس نے ان کے گروپ کے لڑکے لڑکیوں سمیت 22 افراد کے بیانات ریکارڈ کرلیے ہیں جب کہ تفتیش میں انکشاف ہوا ہے کہ مغویہ کی بہن کی بھی موقع پر موجود تھی۔

کراچی کے پوش علاقے ڈیفنس میں ہفتے کی شب کار سوار ملزمان ایک نوجوان کو گولی مار کر اس کے ساتھ موجود لڑکی کو اغواء کر کے فرار ہو گئے تھے۔

مذکورہ واقعے کی سی سی ٹی وی فوٹیج منظر عام پر آگئی جس میں میں دیکھا جاسکتا ہے کہ دعا اور زخمی حارث چہل قدمی کررہے ہیں اور دونوں جیسے ہی گلی میں مڑے تو ملزمان نے فائرنگ کی۔

پولیس کے مطابق ملنے والی اہم معلومات سے تفتیش تیزی سے آگے بڑھ رہی ہے جب کہ تفتیشی ٹیم نے بڑا بخاری میں واقع ہوٹل”ماسٹر چائے” کو اس اہم کیس کیلئے مرکز تفتیش بنا لیا ہے۔

یاد رہے کہ ڈیفنس فیز 6 کے علاقے بڑا بخاری اور اطراف میں اس طرح کے ہوٹل نوعمر لڑکے لڑکیوں کی بیٹھک بن چکے ہیں۔پولیس ذرائع کے مطابق ماسٹر چائے کے تمام ویٹرز، سیکیورٹی گارڈ اور دیگر ملازمین سمیت دیگر افراد کے بیانات ریکارڈ کئے گئے ہیں۔

اس سلسلے میں ایک اور انکشاف ہوا ہے کہ واردات کے وقت دعا کی بڑی بہن بھی اسی ہوٹل پر اپنے دوست کے ساتھ موجود تھی۔بہن کے مطابق دعا اور حارث بات چیت کرنے کے لیے اٹھ کر ٹہلنے لگے کہ گولی چلنے کی آواز آئی۔

بیانات سے یہ بھی انکشاف ہوا ہے کہ مغوی دعا منگی کئی ماہ سے وقفے وقفے سے دوستوں کے ساتھ ماسٹر چائے پر آکر بیٹھتی تھی تاہم گزشتہ چار پانچ دن سے وہ مسلسل اور طویل دورانیہ کے لیے بیٹھک کر رہی تھی۔

اس بیٹھک کے 3 لڑکوں کو بھی پولیس نے بیانات کے بعد مزید تفتیشی مدد کے لیے روک لیا ہے۔پولیس ذرائع کے مطابق واقعہ سے پہلے اور بعد میں علاقے کی سی سی ٹی وی فوٹیجز میں نظر آنے والی ملزمان کی کار جیسی ایک مشکوک گاڑی بھی پکڑلی گئی ہے تاہم اس حوالے سے مزید تفتیش جاری ہے ۔

LEAVE A REPLY

Please enter your comment!
Please enter your name here