طیارے میں دوران پرواز کھانے کا ذائقہ کیوں بدل جاتا ہے؟

0

لاہور(اے ون نیوز) فضائی کمپنیاں کھانے کی ترکیبوں میں تبدیلی کرکے اپنے مسافروں کو پیش کرتے ہیں لیکن کیا وجہ ہے اس کے باوجود دوران سفر کھانے کا ذائقہ بدل جاتا ہے۔

العربیہ ڈاٹ نیٹ میں چھپنے والی دلچسپ رپورٹ کے مطابق فضائی سفر کے دوران طیارے کی ٹھنڈی، خشک ہوا اور ہزاروں فٹ کی بلندی پر دباؤ کی کم سطح کے نتیجے میں زبان میں ذائقے کے مسامات اسی طرح سُن ہو جاتے ہیں جس طرح نزلے میں مبتلا شخص کے ہوتے ہیں۔

رپورٹ کے مطابق انتہائی بلندی پر پہنچ کر ذائقے میں پہچان کی صلاحیت 30 فیصد کم ہو جاتی ہے جبکہ نمی میں کمی کے باعث انسانی ناک خشک ہو جاتی ہے جس سے ذائقے کی حِس کمزور ہو جاتی ہے۔

اس کے علاوہ کھانے کے ذائقے کی تبدیلی میں دیگر عوامل بھی کردار ادا کرتے ہیں۔ کیونکہ کھانے کو ذخیرہ کرنے اور طیارے میں پیش کرنے کے دوران طویل وقفہ ہوتا ہے، اس دوران کئی گھنٹے گزر جاتے ہیں۔

اس مسئلے کے حل کیلئے مسافروں کو پیش کیے جانے والے کھانوں میں ادرک، لہسن، سُرخ مرچ اور دارچینی وغیرہ کا اضافہ کر دیتی ہیں تاکہ ان کا ذائقہ برقرار رہ سکے۔

LEAVE A REPLY

Please enter your comment!
Please enter your name here