فاطمہ نامی لڑکی کو دھمکیاں دینے والا لڑکا اب کہاں ہے ؟ تفصیلات سامنے آ گئیں

0

لاہور (اے ون نیوز )فاطمہ نامی لڑکی کو بے آبرو کرنے اور قتل کی دھمکیاں دینے والے ” ابتشام زاہد “ کو پولیس نے پکڑ کر اندر کر دیاہے ، فاطمہ نامی لڑکی کو انصاف دلانے کیلئے سوشل میڈیا پر بھر پور مہم چلائی گئی جس کے بعد پولیس کو ہوش آیا اور پھر اسے گرفتار کیا گیا ۔

تفصیلات کے مطابق چند روز قبل سوشل میڈیا پر صارفین نے ” ابتشام بی ہائنڈ دی بارز “ کے نام سے ٹرینڈ شروع کیا جس میں تحقیق کرنے پر معلوم ہوا کہ ایک نوجوان کی اسلحہ کے ہمراہ تصاویر اور ایک ویڈیو گردش کر رہی ہے جس میں وہ ایک فاطمہ نامی لڑکی کو عصمت دری اور جان سے مارنے کی دھمکیاں دے رہا ہے ، صارفین نے ٹرینڈ چلاتے ہوئے قانون نافذ کرنے والے اداروں کو اس لڑکے کے خلاف سخت اقدامات کر نے کا مطالبہ کیا جبکہ اس سے قبل متاثرہ لڑکی کے اہل خانہ کی جانب سے قانونی راستہ اختیار کیا گیا لیکن انصاف نہیں ملا جس کے بعد فاطمہ نے سوشل میڈیا کے ذریعے لوگوں کی حمایت حاصل کرنے کا فیصلہ کیا ۔

اس کے علاوہ سوشل میڈیا پر ابتشام کے میسجز بھی شیئر کی گئے جن میں سے ایک میں اس نے کہا تھا کہ ”” ابھی بھی آپ کو بول رہا ہوں کہ میرے ساتھ ایک رات گزار لیں ورنہ 30 ہزار میں آج کل لاہور میں قتل ہوجاتے ہیں ، ایسا نہ ہو آپ کے باپ اس دنیا سے چلے جائیں۔”ایک اور پیغام میں بھی متاثرہ لڑکی کے باپ کو قتل کرنے کی دھمکی دی گئی ہے۔“


متاثرہ لڑکی کے مطابق یہ لڑکا اس کا گھر تک پیچھا کرتا ہے، ایک بار اغوا کی بھی کوشش کی، اس کے خلاف تمام ثبوتوں کے ساتھ مقدمہ درج کرایا گیا لیکن پھر بھی اس کے خلاف ایکشن نہیں ہوا، ” میرا ہمارے سسٹم سے سوال ہے کہ ان جانوروں کو جیل میں ڈالنے کیلئے ہمیں مزید کتنے ثبوتوں کی ضرورت ہوگی۔”

جب یہ معاملہ عوامی توجہ کا مرمز بنا تو لڑکی کو دھمکیاں دینے والے اس ابتشام نے دم دما کر بھاگنے کی کوششیں بھی شروع کر دیں اور ایک آڈیو کال لیک ہوئی جس میں وہ دبئی فرار ہونے سے متعلق بتا رہاہے ۔ سوشل میڈیا پر وائرل ہونے والی آڈیو ریکارڈنگ میں سنا جا سکتاہے کہ وہ پنجاب زبان میں ٹیلیفون کا ل پر کہہ رہاہے کہ ” چاچا تسیں تے مینوں مشہور کردتا اے ، ہر جگہ ابتشام ابتشام ہو ریا اے ، میں تے دبئی چلاں ، اللہ حافظ۔“ یعنی ابتشام کسی شخص سے ٹیلیفون پر بات کرتے ہوئے یہ کہتاہے کہ ” چاچا آپ نے تو مجھے مشہور کر دیا ہے ہر جگہ میرا نام ہی لیا جارہاہے ، میں تو اب دبئی جا رہاہوں۔“

LEAVE A REPLY

Please enter your comment!
Please enter your name here