سینئر صحافی اور دانشور طارق اسماعیل ساگر انتقال کر گئے،انا للہ وانا الیہ راجعون

0

لاہور(اے ون نیوز) لاہور(اے ون نیوز)سینئر صحافی،مصنف اور ڈرامہ نگار طارق اسماعیل ساگر گزشتہ روز کرونا میں مبتلا ءہونے کے باعث انتقال کرگئے مرحوم کی عمر 65برس تھی ۔ان کی نماز جنازہ میں زندگی کے مختلف شعبوں سے تعلق رکھنے والی شخصیات نے شرکت کی بعد ازاں ان کو مقامی قبرستان میں سپرد خاک کردیا گیا۔

مرحوم ایک بہترین لکھاری تھے۔ان کے زیادہ تر ناولوں کا موضوع انڈیا رہا۔ انھوں نے انڈیا کا مکروہ چہرہ دنیا کے سامنے واضح کیا۔انڈیا کی ایجنسیوں کے متعلق بھی ان کی تحقیقی کتب شائع ہو چکی ہیں جو نہایت محنت اور وضاحت سے لکھی گئیںاور پڑھنے والوں کو بیش قیمت معلومات مہیا کرتی ہیں۔ انڈیا کے علاوہ انھوں نے پاکستانی سیاست کی غلاظت اور گندگی سے بھی پردہ اٹھایا جس کی وجہ سے ان کو بھارت میں قید و بند کی صعبتیں بھی برداشت کرنا پڑیں۔ہمیشہ مفید اور معاشرہ سدھارنے والی تحریر یںلکھیں۔طارق اسماعیل ساگرنے 65کتب23ڈرامہ سیریلز کے علاوہ ”سلاخیں“ اور”سیلیوٹ“جیسی فلمیں بھی تحریر کیں۔ ”میں ایک جاسوس تھا،کمانڈو،ٹارگٹ کہوٹہ،جنون،اے راہ حق کے شہیدو،اسامہ بن لادن،فالکن کون تھا،کٹ آﺅٹ، لہو کا سفر،چناروں کے آنسو،بیس کیمپ، را، شکنجہ،اور امریکہ لرز اٹھا،ڈرگ مافیا، پھندہ،وادی لہو رنگ، محاصرہ، جاسوس کیسے بنتا ہے،ڈبل کراس، بھٹکا ہوا راہی،گرفت، ریڈ الرٹ،الاﺅ، لہو کا سفر، بے نام عقیدت،بیس کیمپ،دہشت گرد،آئی ایس آئی ہی کیوں،کریک ڈاﺅن، یلغار وغیرہ “ ان کی مشہور تصنیفات ہیں۔

طارق اسماعیل ساگر علالت سے قبل ایک نئے پراجیکٹ پر کام کررہے تھے لیکن زندگی نے ان کو مہلت نہ دی اور وہ اس کو مکمل کئے بغیر دنیا سے رخصت ہوگئے۔عرفان کھوسٹ،پرویز کلیم،راشد محمود،عذرا آفتاب،ڈائریکٹر شہزاد رفیق،جرار رضوی،ندیم نظر،ٹھاکر لاہوری،مسعود بٹ،اچھی خان،سہراب افگن،میگھا سمیت ثقافتی اور ادبی حلقوں نے طارق اسماعیل ساگر کے انتقال پر گہرے رنج وغم کا اظہار کیا ہے طارق اسماعیل ساگر مرحوم کا خلا پر کرنا مشکل ہوگا۔مرحوم کا طرز تحریر شستہ ، آسان اور عام فہم تھا اسلوب میں سلاست و روانی تھی ثقیل و مشکل الفاظ کے برتاﺅسے گریز کرتے تھے۔اللہ مرحوم کے درجات بلند فرمائے اوراہل خانہ کو صبر جمیل عطاءکرے۔

طارق اسماعیل ساگر کی کتب کی فہرست
آخری گناہ کی مہلت، آدم خور کا تعاقب، اے راہ حق کے شہیدو،افغانستان پر کیا گزری،الاو¿،امریکہ رے امریکہ۔اور امریکہ لرز اٹھا۔ اور حصار ٹوٹ گیا،بھارت توٹ جائے گا،بلوچستان کا آتش فشان،بے نام سی عقیدت،بھٹکتا ہوا راہی،بلیک واٹر،چناروں کے آنسو،کمانڈو،کرپشن کا بھوت ناچ،کورٹ مارشل،کریک ڈاون،کراس فائل،کٹ آوٹ،دہشت گرد،دیوتا کی موت،دھویں کی دیوار،ڈبل کراس،ڈرگ مافیا،فرار کے بعد،گفٹ،حیدران،حمودالرحمن کمیشن،جب دشمن نے للکارا،جاسوس کیسے بنتے ہیں،کفارہ،کارگل کرائسس ،خفیہ ایجنسی کی دیشت گردی،لہو کا سفر،لال مسجد،لہردار پانیوں کے کارواں،محاصرہ،میں ایک جاسوس تھا،مکتی بانی سے ا ٓپریشن بلیو سٹار تک،مسافت،نجات،آن دی ریکارڈ،آپریشن بلیو سٹار،آپریشن ڈیزرٹ سٹارم،پاکستان عالمی سازش کے نرغے میں،پھندا، پورب کی سمت،را،ریڈ الرٹ،سازش،صہونیت اور عالم اسلام،شکنجہ،شملہ کا سوامی،شری کانت،تعاقب،ٹارگٹ کہوٹہ،ٹارگٹ پکستان تھا،تھرڈ ایجنسی،تم کتنے بھٹو مارو گے،انکل ٹام کے دیس،وادی لہو کے رنگ،وطن کی مٹی گواہ رہنا،یلغارمزید ان کے کچھ کالم بھی بہت مشہور ہوئے جن کی فہرست ذیل ہے بے حمیتی کے سنچورین ٹینک۔ ک±ھل کر سامنے آو۔ جنرل پاشا۔ سات منزلہ بلڈنگ کی منظوری ؟ پاکستان بچانا ہے؟ سی آئی اے اور ”را“ کا وار پلان کیا ہے؟ امریکی گریٹ گیم۔ تاریخ کو یاد رکھیں! سی آئی اے کا مسلم دہشت گرد نیٹ ورک۔متبادل حکمت عملی۔ بلوچستان ٹوپی ڈرامہ۔ آدھا سچ۔جناب چیف آف آرمی سٹاف – عاقبت نا اندیش – یہ صرف صحافت نہیں – دہشت گردی کی تازہ لہر- تاریخ پر رحم کریں – دانش ور یا غدار؟ کھلا جیل خانہ – امریکی انخلائ اور تازہ حملے – پھر کیا ہو گا؟ طالبان کی تازہ پیشرفت – بھارتی جارحیت اور جھوٹ – بے حسی یا بے غیرتی؟دہشت گرد کون ہے؟ ایٹمی وارننگ یا محدود جنگ کی دھمکی – پانچ فروری کا سبق – آنے والا کل – بزدل دشمن – نا کردہ گناہوں کی سزا – کوئی نئی بات نہیں – شرم کرو – زہریلے سانپ ۔بردہ فروش طارق ۔فقط زوق پرواز ہے زندگی – حسرت ناکام – انصاف کیجئے – ریمنڈ ڈیوس کو یاد رکھیں – ناطقہ سر بگریباں ہے۔ بحث برائے بحث – ہم نہ کہتے تھے – جمہوریت کا انتقام – حب الوطنی؟ حسین حقانی کی تازہ واردات – ہم زندہ قوم ہیں – نئے چیلنج – نئے معاشی حب بنائیں – لاتوں کے بھوت – زندہ ہونے کا احساس – زیادہ بہتر تھا اگر – بھارت کی چنکیائی چالیں – دشمن کوئی غیر نہیں – میڈیا اور وزیرِ داخلہ –کیا وقت نہیں آ گیا ؟کنٹرول لائن – حقیقت کیا ہے؟ حالاتِ حاضرہ اور مولانا سمیع الحق۔شام پر حملہ لیکن – چھ ستمبر کو سلام – اغواءبرائے تاوان؟ کراچی بحالی امن آپریشن۔ دال میں کچھ کالا ہے۔آخری حد تک نہ جائیں – واہ ری کراچی تیری قسمت۔ بھارت کا اڈوانس انٹیلی جنس یونٹ۔افغانستان کےبھارتی قونصلیٹ – گریٹ گیم کا مرکزی کردار بھارت ہے – سن تو سہی – دہشت گردوں کا کارٹل – پاکستان کے گرد گھیرا تنگ ہو رہا ہے ۔فضل اللہ کا انتخاب – پاکستان کے خلاف عالمی سازش کامیاب ہو گئی؟ سازش کا آخری مرحلہ۔ نصیر الدین حقانی کو کس نے مارا؟ڈرون حملے- سموک سکرین کے پیچھے چھپے گھناونے امریکی عزائم۔ مسنگ پرسنز – ہیں کواکب کچھ نظر آتے ہیں کچھ – امریکی وزیر دفاع کی آمد اور بھارتی پیش رفت۔عبدالقادر ملا کی شہادت۔ ایک بھیانک سازش۔ بھارتی ضد اور ہٹ دھرمی خطے کے امن کو تباہ کر دے گی – طالبان مذاکرات – تازہ پیش رفت – نءسازشیں جنم لے رہی ہیں – افغان طالبان اپنی اہمیت ثابت کر رہے ہیں – حکومت کی قوتِ فیصلہ جواب دے گئی –دہشت گردی کی تازہ لہر – پاکستان پر عالمی دہشت گردوں کا حملہ – میڈیا کس کا کھیل کھیل رہا ہے؟ بلوچستان کی آگ میں سب کچھ جل جائے گا – بلیک واٹر سے زی تک – میڈیا – کیا ہونے جا رہا ہے؟ توڑ دیتا ہے کوئی موسی طلسم سامری۔بھارتی میڈیا کا متوقع وزیراعظم نریندرمودی – نیل کے ساحل سے لے کر تابخاک کاشغر- افغان انتخابات اور نئی گریٹ گیم – حکومت آرمی تناو اور عالمی منظر نامہ – پاکستان دشمنوں کے ہاتھ مضبوط نہ کریں – ایہہ پتر ہٹاں تے نئیں وکدے – سنبھل جاو – آئی ایس آئی ہی کیوں؟ قومتی سلامتی سے مت کھیلیں۔ تکبیرِ مسلسل – کھیل کاپانسہ کیسےپلٹا – خون خاک نشیناں – یہ گھڑی محشر کی ہے، توعرصہ محشرمیں ہے –

LEAVE A REPLY

Please enter your comment!
Please enter your name here