ایران میں یوکرین کے طیارے پرمبینہ میزائل حملہ،برطانوی ریسرچ ویب سائٹ نے تہلکہ خیزویڈیوجاری کر دی

0

لند(اے ون نیوز)ایران میں یوکرین کے مسافر طیارے کو مبینہ طور پر میزائل سے نشانہ بنائے جانے کی نئی ویڈیو سامنے آگئی۔غیر ملکی میڈیا پر چلنے والی اس ویڈیو کو گزشتہ روز ایران میں تباہ ہونے والے یوکرینی مسافر طیارے کی ویڈیو بتایا جارہا ہے، اس حادثے میں طیارے میں سوار تمام 176 افراد ہلاک ہوئے۔

غیر ملکی میڈیا کا کہنا ہےکہ طیارے کو میزائل سے نشانہ بنایا گیا ہے جب کہ ویڈیو میں دیکھا جاسکتا ہےکہ رات کے اوقات میں آسمان پر تیز روشنی کے ساتھ ایک میزائل نما ہتھیار نمودار ہوا اور فضا میں ہی ٹکرایا جس سے آگ کے شعلے بلند ہوئے اور دھماکے کی آواز سنائی دی۔

امریکی اخبار نیویارک ٹائمز کا کہنا ہےکہ ویڈیو میں طیارے کو جس جگہ نشانہ بنایا گیا ہےیہ وہی مقام ہے جہاں طیارے کے ٹرانسمیشن سگنل معطل ہوئے۔

نیویارک ٹائمز کے مطابق طیارہ پرواز کے بعد واپس ائیرپورٹ کی طرف مڑنے سے پہلے کچھ منٹ سے پرواز کرتا رہا جس کے بعد اس میں آگ لگی اور یہ تباہ ہوگیا۔

برطانوی ریسرچ ویب سائٹ کی جانب سے جاری ویڈیو

برطانیہ کی ایک آزاد ریسرچ ویب سائٹ کا دعویٰ ہے کہ جیولوکیشن ٹیکنالوجی اور دیگر ٹیکنیکس سے یہ ویڈیو ایرانی علاقے پرند سے حاصل کی گئی ہے۔جب کہ نیویارک ٹائمز اور سی این این کی جانب سے یہ ویڈیو اپنے ذرائع سے حاصل کرنے کا دعویٰ کیا گیا ہے۔

برطانوی ریسرچ ویب سائٹ کا کہنا ہےکہ حتی الامکان طیارے پر دو میزائل فائر کیے گئے جس کے بعد وہاں موجود کسی شخص نے یہ ویڈیو بنائی جب کہ نیویارک ٹائمز کی رپورٹ میں کہا گیا کہ دھماکے کی آواز سنتے ہی وہاں موجود کسی شخص نے ویڈیو بنائی۔

تاہم عرب خبر رساں ادارے الجزیرہ کا کہنا ہےکہ ویڈیو کی آزادانہ تصدیق نہیں ہوسکی ہے۔ گزشتہ روز ایران میں یوکرین کا مسافر طیارہ گر کر تباہ ہوا جس میں 176 افراد ہلاک ہوئے جب کہ مغربی رہنماؤں نے شبہ ظاہر کیا ہےکہ طیارے کو ایران نے میزائل سے نشانہ بنایا تاہم ایران نے اس کی تردید کی ہے۔

حادثے کی تحقیقات کیلئے امریکا کو دعوت
ایران نے یوکرین طیارہ حادثےکی تحقیقات کیلئے امریکا کو دعوت دےدی ہے۔امریکی اخبار کے مطابق ایران نے عالمی سول ایوی ایشن تنظیم کے ذریعے امریکا کو تحقیقات کی دعوت دی۔امریکی اخبار کے مطابق آئی سی اے او کے ذریعے امریکا کے قومی ٹرانسپورٹیشن سیفٹی بورڈکو مدعوکیا گیاہے۔

LEAVE A REPLY

Please enter your comment!
Please enter your name here