برٹش ایئرویز سے 36 ہزار ملازمین کو معطل کیے جانے کا امکان

0

لندن(اے ون نیوز)کورونا وائرس کی وجہ سے اپنی زیادہ تر پروازوں کو بند کرنے والی برٹس ایئرویز کی جانب سے 36 ہزار ملازمین کو معطل کیے جانے کا امکان ہے۔برطانوی نشریاتی ادارے بی بی سی کی رپورٹ کے مطابق برٹش ایئرویز متحد یونین سے تقریباً ایک ہفتے سے اس حوالے سے مذاکرات کررہی ہے۔

دونوں جانب سے ایک وسیع معاہدے پر بات ہوئی ہے تاہم چند چیزوں پر حتمی فیصلہ ہونا باقی ہے۔اس معاہدے سے برطانوی ایئرلائنز کے 80 فیصد کیبن عملہ، گراؤنڈ اسٹاف، انجینیئرز اور ہیڈ آفس میں کام کرنے والے افراد کی نوکریاں معطل ہوجائیں گے۔

اس فیصلے سے گیٹ وک اور لندن سٹی ایئرپورٹ میں ایئرلائنز کی جانب سے بحران کے خاتمے تک آپریشنز بند کرنے کے بعد تمام اسٹاف متاثر ہوگا۔امید ہے کہ متاثرین اپنی چند بقایاجات حکومت کے کورونا وائرس روزگار برقراری اسکیم کے تحت وصول ککریں گے۔

اس اسکیم سے ڈھائی ہزار پاؤنڈ تک کے تنخواہ حاصل کرنے والوں کی 80 فیصد تک تنخواہ انہیں دی جائیں گی۔ایوی ایشن کے شعبے کے تجزیہ کار جون اسٹرک لینڈ کا کہنا تھا کہ برطانوی ایئرلائنز اور متحد یونین کے درمیان ’سخت مذاکرات‘ کا مطلب ہے کہ انہیں معاہدہ کرنے میں وقت لگا ہوگا۔

ان کا کہنا تھا کہ ’پائلٹوں کو آدھی تنخواہ دینے کا معاہدہ اس سے پہلے ہی ہوگیا تھا جو اس بات کی نشاندہی کرتا ہے کہ معاملہ کتنا حساس ہوگا‘۔خیال رہے کہ برطانوی ایئرلائنز نے پہلے ہی اپنے پائلٹوں سے معاہدہ کرلیا تھا جو دو ماہ تک اپنی تنخواہ میں 50 فیصد تک کٹوتی برداشت کریں گے۔

ایئرلائنز کا ممکنہ فیصلہ اس بات کی نشاندہی کرتا ہے کہ برطانیہ میں ایوی ایشن کی صنعت کورونا وائرس کے پھیلاو کو روکنے کے لیے لگائی گئی سفری پابندیوں کی وجہ سے کتنی بری طرح متاثر ہوئی ہے۔خیال رہے کہ برطانیہ میں وزیر اعظم بورس جونسن سمیت اب تک 29 ہزار 865 کورونا وائرس کے کیسز سامنے آچکے ہیں جن میں سے 2 ہزار 357 افراد ہلاک بھی ہوچکے ہیں۔

LEAVE A REPLY

Please enter your comment!
Please enter your name here