سائیکل اور بھینس چوری سے ملک تباہ نہیں ہوتا،وزیراعظم عمران خان

0

اسلام آباد(اے ون نیوز) وزیراعظم پاکستان عمران خان نے عوام سے براہ راست بات کرتے ہوئے کہا کہ کورونا کی پہلی اور دوسری لہر میں قوم نے ایس او پیز پر عمل کیا، کورونا کی تیسری لہر خطرناک ہے،

عید کی چھٹیوں میں سخت احتیاط کی ضرورت ہے، بھارت میں لوگ سڑکوں پر مر رہے ہیں، آکسیجن کی کمی ہے، بھارت میں 22 کروڑ لوگ غربت کی لکیر سے نیچے ہیں، تیسری لہر میں بھارت کے حالات سب کے سامنے ہیں۔

عمران خان کا کہنا تھا کہ لاک ڈاؤن کے باعث سب سے زیادہ نقصان غریب طبقہ کو ہوتا ہے، قوم سے اپیل ہے ماسک پہنیں اور سماجی فاصلے پر عمل کریں، پاکستان میں کیسز تیزی سے اوپر نہیں جا رہے جو خوش آئند ہے۔

وزیراعظم نے کہا ہے کہ لاک ڈاؤن کے باعث سب سے زیادہ نقصان غریب طبقہ کو ہوتا ہے، قوم سے اپیل ہے ماسک پہنیں اور سماجی فاصلے پر عمل کریں، پاکستان میں کیسز تیزی سے اوپر نہیں جا رہے جو خوش آئند ہے۔

وزیراعظم نے کہا کہ کرکٹ کی وجہ سے پوری دنیا دیکھی، وہاں کا سسٹم دیکھا، مغرب میں قانون کی بالادستی ہے، انسانی معاشرے میں قانون کی بالادستی ہوتی ہے، دنیا کی تاریخ میں جو قوم اوپر گئی وہ قانون کی بالادستی کی وجہ سے گئی، بہترین معاشرے میں قانون غریب کو تحفظ دیتا ہے، جہاں انصاف ختم ہو جائے وہ قومیں تباہ ہو جاتی ہیں، حضرت علیؓ کا قول ہے کفر کا نظام چل سکتا ہے لیکن ظلم کا نہیں۔

عمران خان نے مزید کہا کہ کرپشن ہر غریب ملک کا مسئلہ ہے، طاقتور پیسہ چوری کر کے باہر بھجواتا ہے، غریب ممالک سے ایک ہزار ارب ڈالر چوری ہو کر بیرون ملک جاتا ہے، سائیکل اور بھینس چوری سے ملک تباہ نہیں ہوتا، جب ملک کا سربراہ اور طاقتور لوگ چوری کرتے ہیں تو ملک تباہ ہو جاتا ہے، نواز شریف نے ڈنڈوں سے سپریم کورٹ پر حملہ کیا، اس وقت کے چیف جسٹس کے ساتھ کھڑا تھا، مجھے جیل میں ڈالا گیا۔

LEAVE A REPLY

Please enter your comment!
Please enter your name here