ندی میں چھلانگ لگا کر خود کشی کرنے والی عائشہ کو شوہر کیسے بلیک میل کرتا تھا،مزید انکشافات

0

نئی دہلی (اے ون نیوز) ندی میں چھلانگ لگا کر خود کشی کرنے والی عائشہ کا کیس نیا رخ اختیار کر گیا۔ تفصیلات کے مطابق بھارت میں ایک مسلمان شادی شدہ لڑکی کی جانب سے ندی میں کود کر خود کشی کیے جانے کا معاملہ عدالت میں پہنچنے کے بعد مکمل طور پر نیا رخ اختیار کر گیا۔ بھارتی میڈیا کے مطابق عدالت میں ہوئی عائشہ خود کشی کیس کی سماعت کے دوران متوفی کے وکیل کی جانب سے تہلکہ خیز انکشافات کیے گئے۔

وکیل نے بتایا کہ عائشہ کا شوہر ایک بدکردار شخص ہے جس نے راجھستان سے تعلق رکھنے والی لڑکی سے ناجائز تعلقات قائم کر رکھے تھے۔ عارف اپنی بیوی عائشہ کے سامنے اس لڑکی سے ویڈیو کال پر بات کرتا اور بیوی کو ذہنی ذیت پہنچاتا تھا۔ بات صرف ناجائز تعلقات کی ہی نہیں، بلکہ عارف اپنے سسرال والوں کو بھی بلیک میل کر رہا تھا۔عارف اپنے سسرال والوں سے پیسے لیتا اور پھر یہ پیسا گرل فرینڈ پر لٹاتا تھا۔


عائشہ کے اہل خانہ بیٹی کی خاطر خاموشی سے داماد کو پیسے دیتے رہے۔ اس تمام معاملے میں عائشہ کو اپنے سسرال والوں کے تشدد کا بھی سامنا کرنا پڑا۔ عارف کے اہل خانہ عائشہ کو تشدد کا نشانہ بناتے اور جہیز کا مطالبہ کرتے تھے۔ یہ انکشاف بھی ہوا کہ خود کشی سے قبل عائشہ حاملہ ہوئی تھی، تاہم شوہر کی جانب سے دی جانے والی اذیت کے باعث حمل ضائع ہوگیا۔مزید بتایا گیا ہے کہ پولیس عائشہ کے شوہر کو گزشتہ روز گرفتار کر چکی۔

LEAVE A REPLY

Please enter your comment!
Please enter your name here