پاکستان نے کلبھوشن یادیو کیس میں بھارتی وکیل کے بے بنیاد الزامات مسترد کردیے

0

اسلام آباد(اے ون نیوز)دفتر خارجہ کی ترجمان عائشہ فاروقی نے کہا ہے کہ پاکستان، کلبھوشن یادیو کیس میں بھارت کے وکیل ہریش سیلو کی جانب سے لگائے گئے بے بنیاد اور غلط الزامات کو مسترد کرتا ہے۔

خیال رہے کہ 3 مئی کو ایک آن لائن لیکچر کے دوران عالمی عدالت انصاف (آئی سی جے) میں بھارت کی نمائندگی کرنے والے وکیل ہریش سیلو نے الزام لگایا تھا کہ پاکستان نے کلبھوشن یادیو کیس سے متعلق آئی سی جے کے فیصلے کو لے کر چلنے، اس پر دوبارہ جائزے اور غور کرنے کے حوالے سے بھارت کے سوالوں پر جواب دینے سے انکار کردیا۔

دوسری جانب ٹریبیون انڈیا کے مطابق ہریش سیلو نے کہا کہ ہم نے پاکستان کو 4 سے 5 خط لکھے ہیں لیکن وہ صرف انکار کرتے رہے۔انہوں نے کہا تھا کہ میں سمجھتا ہوں کہ ہم اس مقام پر آگئے ہیں جہاں ہمیں اب یہ فیصلہ کرنا ہے کہ ہمیں نتیجہ خیز ہدایات کے لیے دوبارہ آئی سی جے سے رجوع کرنا چاہیے یا نہیں کیونکہ پاکستان آگے نہیں بڑھا۔

ہریش سیلو نے یہ الزام بھی عائد کیا کہ پاکستان نے کلبھوشن یادیو کو ‘بہت دیر’ سے قونصلر رسائی دی اور بھارت سے کیس کی تفصیلات شیئر کرنے سے انکار کردیا۔بھارتی الزامات کو مسترد کرتے ہوئے دفتر خارجہ نے کہا کہ پاکستان نے عالمی عدالت انصاف (آئی سی جے) کے فیصلے پر مکمل طور پر عمل کیا ہے۔

دفتر خارجہ سے جاری بیان میں کہا گیا کہ پاکستان نے بھارت کو قونصلر رسائی دی تھی اور آئی سی جے کے فیصلے کی ہدایات کے مطابق اس کیس معاملے کے مؤثر جائزے اور اس پر غور کے اقدامات پر عملدرآمد کررہا ہے۔

بیان میں کہا گیا کہ بھارتی وکیل کے بیانات ‘افسوسناک اور حقائق کی غلط ترجمانی’ تھے، اس میں مزید کہا گیا کہ پاکستان نے اپنی تمام ٖبین الاقوامی ذمہ داریاں پوری کیں۔

LEAVE A REPLY

Please enter your comment!
Please enter your name here