پی آئی اے برطانیہ میں پھنسے وفاقی وزیر کے خاندان کے تین افراد کو خصوصی پرواز میں واپس لایا، عام شہری نظرانداز

0

لندن (اے ون نیوز ) 9 اپریل تک پاکستان انٹرنیشنل ایئرلائنز (پی آئی اے) کسی مسافر کو پاکستان نہیں لے جا سکا ، جو برطانیہ میں کورونا وائرس کے بڑھنے کی وجہ سے پھنسے ہوئے تھے ۔ لیکن 9 اپریل کو پی آئی اے کی پرواز نے ایک وفاقی وزیر کی فیملی ممبران کو لیکر لندن سے اسلام آباد کے لئے اڑان بھری۔

پی آئی اے کے ذرائع نے اس بات کی تصدیق کی ہے کہ 9 اپریل کی پرواز کے لئے خصوصی انتظامات کیے گئے تھے کیونکہ ایک وفاقی وزیر کے خاندان کے تین افراد اور دیگر “معززین” لندن میں پھنسے ہوئے تھے اور انہیں کسی بھی قیمت پر واپس لانا تھا۔

پی آئی اے انتظامیہ کے ایک شخص نے اپنا نام ظاہر نہ کرنے پر ہمیں بتایا کہ، “تمام انتظامات کرلیئے گئے تھے اور یہ انتظامات اس پرواز کے لئے خصوصی طور پر کیئے گئے تھے، کہ وہ لندن کے ہیتھرو ہوائی اڈے سے مسافروں کو پاکستان کے اسلام آباد ایئرپورٹ لے جائیں کیونکہ ایک وزیر کے کنبہ کے افراد اور کچھ دیگر معززین فوری طور پر لندن سے پاکستان جانا چاہتے تھے۔”

اس کے بعد سے اب تک لندن سے پاکستان کے لئے متعدد “فیری” پروازیں ہوچکی ہیں ، لیکن پی آئی اے کی طرف سے کسی مسافر کو اس بہانے وہاں سے واپس نہیں لائے کہ اس وقت پاکستانی ہوائی اڈوں پرکورونا وائرس سے بچاؤ اور قرنطینہ کیلئے انتظامات نہیں ہیں۔پی آئی اے کے ذرائع نے اس بات کی تصدیق کی کہ 9 اپریل کو وی آئی پیز کے علاوہ دیگر ڈیڑھ سو مسافروں کو لایا گیا تھا۔

پاکستان ہائی کمیشن کے ترجمان نے اس بات کی تصدیق کی ہے کہ انہوں نے پھنسے ہوئے پاکتسانیوں کی فہرست پی آئی اے کو ارسال کردی تھی۔ ترجمان نے مزید کہا ، “مزید وہ مسافر شامل کیئے گئے جن کی سفارش وزارت خارجہ اور پی آئی اے کے مرکزی دفتر نے کی تھی۔”

اسی پرواز میں موجود دو مسافروں نے تصدیق کی کہ وہ وزارتی سطح کی لابنگ کے بعد نشستیں حاصل کرنے میں کامیاب ہوئے تھے۔برطانیہ میں پھنسے ہوئے بہت سے پاکستانی قلیل مدتی ویزہ، بوڑھے اور بیمار بھی شامل ہیں ، اس کے علاوہ وہ طلباء جن کی پروازیں منسوخ ہوگئیں، جب پاکستان نے 21 مارچ کو اپنی فضائی حدود بند کردی۔

جن مسافروں کی پروازیں منسوخ کردی گئیں ہیں انھوں نے حکومت کو برطانیہ سے واپس پاکستان جانے والی خالی پروازوں پر تنقید کا نشانہ بنایا ہے، اور کہا کہ لندن میں پھنسے تمام مسافر ایک ہی پرواز میں پاکستان بھیجے جاسکتے ہیں۔

LEAVE A REPLY

Please enter your comment!
Please enter your name here