ڈاکٹرزاہدمنیرعامرکا سفرنامہ یونان ”سقراط کا دیس“ مارکیٹ میں آ گیا

0

لاہور(اے ون نیوز)مختلف خطوں کے لوگوں سے ملنااور ان کی تاریخ، تہذیب اور طرزِحیات کے بارے میں جاننااور سمجھنازندگی کی بڑی نعمتوں میں سے ہیں۔اس ذریعے سے حاصل ہونے والا علم، دانش مندانہ ثروت مندی اور مسرت کا ایک انمول ذریعہ ہوتاہے۔

یہ بات پاکستان میں یونان کے سفیر ایندریاس پاپاس تاوروAndreas Papastavrou))نے ڈاکٹرزاہدمنیرعامر کے سفرنامہ یونان ”سقراط کا دیس“ کی اشاعت پر کہی ۔انھوںنے ڈاکٹرزاہدمنیرعامرکی مساعی پر انھیں مبارک بادپیش کرتے ہوئے کہاکہ کہ انھوںنے عالمانہ اور انسان دوستی پر مبنی وہ روش اختیارکی ہے جسے ہم سب عزیز رکھتے ہیں۔انھوںنے یونان کا تفصیلی دورہ کرکے اپنی عمیق حساسیت، علم اور قدردانی کے ساتھ اس خطے اور یہاں کی تاریخ کو ماضی بعیدسے عصرحاضر تک دریافت کیا۔انھوںنے ماضی کے دھندلکوں میں پوشیدہ حسن اوریونانِ جدید کے دامن میں دھڑکتی روح ِعصرکا مشاہدہ کیااور اس تمام مشاہدے کو بڑے فن کارانہ اندازمیں اس کتاب کے ذریعے اپنے قاری تک پہنچایاہے۔

یونانی سفیر نے کہاکہ ڈاکٹرزاہدمنیرعامرکی کتاب” سقراط کا دیس “یونان اور پاکستان کے عوام کوایک دوسرے کے قریب لانے میں اہم کرداراداکرے گی۔ انھوںنے کہا مجھے خوشی ہے کہ اس کتاب کے ذریعے اہل پاکستان کوسفریونان کے لیے ایک قیمتی ،دانش منداورعملی رفیق سفرمہیاہوگیاہے۔اب وہ نہ صرف خودکو یونان اور اہل یونان کے قریب محسوس کریں گے بلکہ ان بہت سے پہلووں کوبھی دریافت کرسکیں گے جوہمارے درمیان مشترک ہیں ۔انھوںنے ڈاکٹرزاہدمنیرعامرکا پورے دل سے شکریہ داکرتے ہوئے اس کتاب کو دونوملکوں کوایک دوسرے کے قریب لانے کی ایک کامیاب کوشش قراردیا ۔

پنجاب یونی ورسٹی لاہورکے ادارئہ زبان وادبیات اردوکے ڈائریکٹر اور معروف ادیب، شاعر، محقق اور اقبال شناس پروفیسرڈاکٹرزاہدمنیرعامر کاسفرنامہ یونان” سقراط کا دیس“ کے عنوان سے حال ہی میں قلم فاﺅنڈیشن انٹرنیشنل لاہورسے کتابی صورت میں شائع ہواہے ۔ اس سفرنامے میںزہرہ یا ایفرودائتی کے اصل مجسمے ،افلاطون کی اکیڈمی، دنیاکی تاریخ کے قدیم معبد ایکروپولس ، عیسائیت کی تاریخ میں کلیدی اہمیت رکھنے والے پہاڑی کے وعظ کے محل وقوع ، یونان قدیم وجدید میں عورت کے مقام ،یونان کے نیشنل آرکیالوجیکل میوزیم، ارسطو کے مقبرے کے حوالے سے بالکل نئی معلومات پیش کی گئی ہیں ۔

ڈاکٹرزاہدمنیرعامرنے حال ہی میں ایک امریکی پروفیسر کی جانب سے سقراط پر لگائے جانے والے اس الزام کا جواب بھی دیاگیاہے کہ سقراط اپنے عہد کے ایک خطیب، سیاستدان اور فوجی کی بیوی پر عاشق تھا اور اس کا فلسفہ اسی سے ماخوذہے۔ڈاکٹرزاہدمنیرعامرنے نہ صرف اس بات کی تحقیق کرکے اپنے قارئین کو اس خیال کی غلطی سے آگاہ کیاہے وہاں اس غلط خیال کو پھیلانے والے امریکی مصنف کو بھی خط لکھ کر آئینہ دکھایاہے ۔مصنف کا یہ خط بھی کتاب میں دیکھاجاسکتاہے ۔

یہ سفرنامہ گوناگوں رنگوں کا مجموعہ ہے ۔ڈاکٹرزاہدنے یونان میں مختلف محفلوں سے خطاب کرکے وہاں رہنے والوں کو پاکستانی ادب، تہذیب اور تاریخ سے بھی آگاہ کیاان کی یہ تقاریر بھی شامل کتاب کی گئی ہیں۔کتاب کا پیش لفظ پاکستان میں یونان کے سفیر جناب ایندریاس پاپاس تاوروAndreas Papastavrou)) اور دیباچہ یونان میں پاکستان کے سابق سفیر ،ممتاز ڈپلومیٹ اور فارن سروسزاکیڈمی کے سابق ڈائریکٹرجنرل جناب خالدعثمان قیصر نے قلبند کیاہے ڈاکٹرزاہدمنیرعامراس سے پہلے بھی کئی سفرنامے لکھ چکے ہیں جن میں شام، لبنان،ماریشس ،ترکی اور مصر کے سفرنامے خاص طور پر مقبول ہیں۔

LEAVE A REPLY

Please enter your comment!
Please enter your name here