کیا ڈونلڈ ٹرمپ نے یونیورسٹی میں داخلے کے لیے امتحان میں چیٹنگ کی؟ امریکی صدر کی بھانجی نے بھی کتاب لکھ دی

0

واشنگٹن(اے ون نیوز) امریکی سیاستدان جان بولٹن کے بعد اب صدر ٹرمپ کی بھانجی میری ٹرمپ کی کتاب منظرعام پر آنے جا رہی ہے جس میں اس نے صدر ٹرمپ کے متعلق الزامات پر مبنی ایسی باتیں کہی ہیں کہ صدر موصوف کو صفائیاں پیش کرتے نہیں بن رہی۔ میل آن لائن کے مطابق میری ٹرمپ کی کتاب کے کچھ اقتباسات منظرعام پر آ گئے ہیں جن میں اس نے صدر ٹرمپ کو ذہنی مریض قرار دیا ہے اور لکھا ہے کہ ان کے بیشتر فیصلوں سے بھی ثابت ہوتا ہے کہ وہ ذہنی مریض ہیں۔

اس کے علاوہ میری ٹرمپ نے یہ الزام بھی عائد کیا ہے کہ صدرٹرمپ نے یونیورسٹی آف پنسلوانیا کے معروف بزنس سکول میں داخلہ لینے کے لیے ہونے والے ٹیسٹ میں چیٹنگ کی تھی۔ وہ نقل کے ذریعے پاس ہوئے اور اس بزنس سکول میں داخلہ لیا۔ صدر ٹرمپ کی گھریلو زندگی کے بارے میں میری ٹرمپ لکھتی ہے کہ صدر ٹرمپ کے والد انتہائی غصیلے مزاج کے تھے اور وہ صدر ٹرمپ کے ساتھ انتہائی ناروا سلوک روا رکھتے تھے اور ان کا استحصال کرتے تھے۔

میری ٹرمپ کے ان الزامات کے جواب میں وائٹ ہاﺅس کی طرف سے ایک بیان جاری کیا گیا ہے جس میں ڈپٹی پریس سیکرٹری سارا میتھیوز نے کہا ہے کہ میری ٹرمپ کے الزامات بے بنیاد اور جھوٹ ہیں۔ صدر ٹرمپ کے والد کا ان کے ساتھ رویہ ہمیشہ بہت اچھا رہا۔ وہ بہت پیار کرنے والے باپ تھے اور کبھی صدر ٹرمپ کے ساتھ برے طریقے سے پیش نہیں آئے۔ سارا میتھیوز نے یہ بھی کہا کہ ”صدر ٹرمپ کے بزنس سکول میں داخلے کے لیے چیٹنگ کرنے کا الزام بھی غلط ہے۔ میری ٹرمپ ایک نارسیسسٹ (خودپسندی میں مبتلا شخص)ہے اور خود ذہنی عارضے کا شکار ہے۔ اس کی کتاب ”جھوٹ کی کتاب“ ہے۔“واضح رہے کہ میری ٹرمپ کی کتاب کا نام Too Much and Never Enough: How My Family Created the World’s Most Dangerous Manہے۔ صدر ٹرمپ نے اس کتاب کی اشاعت رکوانے کے لیے عدالت سے بھی رجوع کیا تھا لیکن انہیں ناکامی ہوئی اور عدالت نے کتاب شائع کرنے کی اجازت دے دی۔ اب یہ کتاب اپنے مقررہ وقت سے 2ہفتے پہلے ہی ریلیز ہونے جا رہی ہے۔

LEAVE A REPLY

Please enter your comment!
Please enter your name here