تازہ تریندنیا

محبوبہ کے35ٹکڑے کرنے کے کیس میں دل دہلا دینے والے انکشافات

دہلی (اے ون نیوز ) دہلی میں اپنی محبوبہ کو قتل کر نے کے بعد لاش کے 35 ٹکڑے کرنے کے کیس میں تفتیش کے دوران دل دہلا دینے والے انکشافات سامنے آئے ہیں۔

تفصیلات کے مطابق 28 سالہ آفتاب امین پونا والا ، جو کہ فوڈ بلاگر ہے اور اس کا تعلق ممبئی سے ہے ، کو 11 نومبر کو پولیس کی جانب سے اپنی گرل فرینڈ کو 18 مئی کو قتل کرنے کے الزام میں گرفتار کیا گیا۔

بھارتی میڈیا کی رپورٹس کے مطابق آفتاب نے اپنی گرل فرینڈ کو قتل کرنے کے کچھ دن کے بعد اپنے کرائے کے فلیٹ پر ایک اور لڑکی کو ملنے کیلئے بلایا ، ملزم کا دوسری خاتون سے بھی رابطہ اسی ڈیٹنگ ایپ کے ذریعے ہوا جس پر وہ شردھا سے ملاتھا، دوسری لڑکی پیشے سے سائیکالوجسٹ ہے۔

دوسری لڑکی نے مہرولی میں واقع آفتاب کے کرائے کے فلیٹ کا دو مرتبہ جون اور جولائی میں دورہ کیا ، اس دوران شردھا کی لاش گھر پر ہی موجود تھی جس کے ٹکرے ملزم نے فریج میں چھپائے ہوئے تھے۔ملزم کا کہناتھا کہ شردھا کو قتل کرنا آسان تھا لیکن اس کی لاش کو ٹھکانے لگانا آسان کام نہیں تھا ، اس نے فیصلہ کیا کہ لاش کو ٹھکانے لگانے کا آسان حل اس کے ٹکرے کرنا ہے اور اس کیلئے اس نے انٹرنیٹ پر سرچنگ بھی کی۔

پولیس کا کہناہے کہ آفتاب اور شردھا کے درمیا ن شادی کو لے کر جھگڑا ہواتھا اور اس نے امریکی ٹی وی سیریز” ڈیکسٹر“ سے متاثر ہو کر لاش کے ٹکڑے کیئے۔اس کے بعد آفتاب 300 لیٹر والا فریزر ٹکڑوں کو محفوظ کرنے کیلئے خرید کر لایا ، ملزم نے لاش کے ٹکروں سے آنے والی بدبو کو ختم کرنے کیلئے فلیٹ میں اگر بتی اور روم فرشنر کا سہارا لیا۔

شردھا کو قتل کرنے کے بعد ملزم نے لوگوں کی نظروں میں آنے سے بچنے کیلئے دوستوں کے ساتھ سماجی ویب سائٹ پر بات چیت کا سلسلہ جاری رکھا تاکہ شکوک نہ ابھر سکیں ، اس نے اپنے گھر کے تمام بلز بھی ادا کر دیئے تاکہ کسی بھی کمپنی کا نمائندہ اس کے ممبئی کے گھر دستک نہ دے۔

جواب دیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا۔ ضروری خانوں کو * سے نشان زد کیا گیا ہے

Back to top button